جمعرات، 30 جولائی، 2015

کتاب رشید ابن رشید بابت یزید کے متعلق وضاحت


کتاب رشید ابن رشید بابت یزید کے متعلق وضاحت
 مولاناساجد خان نقشبندی
یہ مضمون میری غیر مطبوعہ کتاب ’’دفاع اہل السنۃ والجماعۃ‘‘ سے ماخوذ ہے دعا فرمائیں کہ کتاب جلد سے جلد مکمل ہوجائے ۔

مسئلہ یزید اور علماء اہل السنت والجماعت دیوبند


مسئلہ یزید اور علماء اہل السنت والجماعت دیوبند
از افاداتِ مولانا ساجد خان نقشبندی صاحب حفظہ اللہ

مولانا مفتی رشید احمد گنگوہی رحمتہ اللہ علیہ

سوموار، 27 جولائی، 2015

حکیم الامت مجدد ملت مولانا اشرف علی تھانویؒ پر انگریز سے 600 روپے لینے کا الزام




ماخوذ از دفاع اہل السنۃ والجماعۃ یہ جواب ہدیہ بریلویت میں بھی چھپ چکا ہے رشحات قلم ساجد خان نقشبندی
اعتراض نمبرحضرت حکیم الامت رحمۃ اللہ علیہ کو ۶۰۰ روپے انگریز سے ملتے تھے ملاحظۃ مکالمۃ الصدرین اس امر کی تردید خود حضرت تھانوی صاحب بھی نہ کرسکے ملاحظہ ہوالاضافات الیومیہ ص ۶۹ ج۶۔
جواب: بریلوی حضرات کا یہ دعوی سرے سے باطل ہے۔
(اولا):


اللہ کو پہلے معلوم نہیں ہوتا بلغۃ الحیران پر ایک اعتراض کا جواب


% اللہ کو پہلے معلوم نہیں ہوتا بلغۃ الحیران پر ایک اعتراض کا جواب %
ساجد خان نقشبندی
یہ جواب میری غیر مطبوعہ کتاب "دفاع اہل السنۃ والجماعۃ" سے ماخوذ ہے اس کتاب میں راقم نے بریلویوں کے 500 سے زائد اعتراضات کے جوابات دئے ہیں کمپوزنگ ہورہی ہے اشاعت کیلئے دعا فرمائیں
(اعتراض نمبر۱۰):اللہ تعالی کو پہلے بندوں کے کاموں کی خبر نہیں ہوتی بعد میں ہوتی ہے ۔ نعوذ باللہ
یہ عنوان قائم کرکے ترجمان رضاخانیت لکھتا ہے :


الیاس عطاری کا بیٹا بلال عطاری گستاخ رسول ہے بریلوی مولوی کا فتوی

الیاس عطاری کا بیٹا بلال عطاری گستاخ رسول ہے بریلوی مولوی کا فتوی
بریلوی مولوی فیض مرشد کہتا ہے کہ الیاس عطار کے بیٹے بلال عطار نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی عصمت کا انکار کرکے گستاخ رسالت و کفر کا ارتکاب کیا ہے(کتاب الصلوۃ والسلام علیک یا رسول اللہ ،ص26) اس کتاب پر بریلوی ضیغم اہلسنت حسن علی رضوی اور ایوب جان سرہندی کی تقریظات موجود ہیں
جو آدمی اپنے بیٹے کو عاشق رسول نہ بناسکا جس کا اپنا بیٹا کفر و گستاخ ہے وہ تمہیں کیا عاشق بنائے گا اس لئے اس گستاخ لوٹا جماعت سے اپنے ایمان کو بچاو یہ دعوت اسلامی نہیں عداوت اسلامی ہے
بشکریہ مولانا ساجد خان نقشبندی حفظہ اللہ


ہفتہ، 25 جولائی، 2015

ٹھیکیدار ظفر رضوی بریلوی کو منہ توڑ جواب حصہ دوم


ٹھیکیدار ظفر رضوی بریلوی کو منہ توڑ جواب حصہ دوم از طرف قاطع رضاخانیت فاتح بریلویت نوجوان محقق مولانا علی معاویہ صاحب
Posted by Barelvi Razakhani Fitna on Monday, January 12, 2015

ٹھیکیدار ظفر رضوی بریلوی کو منہ توڑ جواب حصہ اول


ٹھیکیدار ظفر رضوی بریلوی کو منہ توڑ جواب حصہ اول از طرف قاطع رضاخانیت فاتح بریلویت نوجوان محقق مولانا علی معاویہ صاحب
Posted by Barelvi Razakhani Fitna on Wednesday, January 7, 2015

طاہر القادری یہود و نصاری کا ایجنٹ


طاہر القادری یہود و نصاری کا ایجنٹ بشکریہ مولانا ساجد خان نقشبندی

پروفسیر کے انگریز کے ایجنٹ ہونے کی ایک اور بہت بڑی دلیل اس کا دہشت گردی کے خلاف فتوی ہے یہ فتوی اس نے

اندرا گاندھی اور دارالعلوم دیوبند

اندرا گاندھی اور دارالعلوم دیوبند
مولانا ساجد خان نقشبندی
بعض رضاخانی اعتراض کرتے ہیں کہ اندرا گاندھی دارالعلوم دیوبند کے جلسہ میں آئی تھی ۔ اس سلسلے میں اولا گزارش یہ ہے کہ اگر وہ جلسہ میں آئی تھی تو آخر اس میں اعتراض والی کیا بات ہے ؟قرآن مجید میں ایک کافر ملک کی کافرہ ملکہ بلقیس کا ذکر تفصیل کے ساتھ موجود ہے وہ حضرت سلیمان علیہ السلام کی دعوت پر ان کی بادشاہت میں حاضر خدمت ہوئی تھی اور وقت کے نبی نے انہیں اپنی مملکت کی سیر کرائی ایک طرف نبی کا یہ فعل مگر دوسری طرف علماء دیوبند کا طرز بھی دیکھ لیں شیخ الاسلام حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب مدظلہ العالی لکھتے ہیں :


جمعہ، 24 جولائی، 2015

کون اماں عائشہ رضی اللہ تعالی عنہا؟؟؟


کون اماں عائشہ رضی اللہ تعالی عنہا؟؟؟
مولانا ساجد خان نقشبندی

مغفرت ذنب رضاخانیوں کا جنید بھائی پر اعتراض کا منہ توڑ جواب


رضا خانیوں کا جنید جمشید پر اعتراض کا منہ توڑ جواب(نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف گناہ کی نسبت کرنا)اس پر رضا ضانی...
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Thursday, July 23, 2015

جنید جمشید بھائی کے حوالے سے جاہلانہ سوالات کے مختصر جوابات


%% جنید جمشید بھائی کے حوالے سے جاہلانہ سوالات کے مختصر جوابات %%

ساجد خان نقشبندی
بغض اور حسد کی آگ انسان کو پاگل کردیتی ہے دنیا میں کئی ایسے لوگ ہوں گے جو دین کا کھلم کھلا مزاق اڑا رہے ہوں گے دین کا تماشہ بنادیا ہوگا عامر لیاقت حسین نے گستاخی کی جیو نے اہل بیت کی توہین کی مگر ان رضاخانیوں کو اگر جلن بغض اور حسد ہے تو صرف اور صرف جنید بھائی سے کیونکہ اس نے کوکب نورانی اور مظفر حسین کے چیلے اور بریلوی مولوی گستاخ صحابہ گندی زبان والے عامر لیاقت حسین کی دکان بندکردی ہے لہذا اب اپنی دکانداری چمکانے کیلئے آئے دن کوئی نہ کوئی پروپگینڈا اسی دلی حسد و بغض کا اظہار ایک سوالنامہ کے طور پر ہمارے بہت ہی محترم بھائی ڈاکٹر ساجد صاحب نے ارسال کئے کہ ان سے ان کے کسی بریلوی رشتہ دار نے کئے ہیں لہذا مختصرا جواب حاضر ہے۔

طاہرالقادری کا امام حسین رضی اللہ عنہ پر فتوٰی


منگل، 21 جولائی، 2015

بہشتی زیور کے ایک وظیفہ پر غیر مقلدین و رضاخانیوں کے اعتراض کا منہ توڑ جواب


بہشتی زیور کے ایک وظیفہ پر غیر مقلدین و رضاخانیوں
کے اعتراض کا منہ توڑ جواب
مولانا ساجد خان نقشبندی
اعتراض : بہشتی زیور میں مولانا اشر ف علی تھانوی صاحب نے لکھا یہ آیت ایک پرچہ پر لکھ کر پاک کپڑے میں لپیٹ کر عورت کے بائیں ران میں باندھے یا شیرینی پر پڑھ کر اس کو کھلاوے انشاء اللہ تعالی بچہ آسانی سے پیدا ہوگا آیت اِذَا السَّمَآءُ انْشَقَّتْ وَاَذِنَتْ لِرَبِّھَا وَ حُقَّتْ وَ اِذَا الْأَرْضُ مُدَّتْ وَأَلْقَتْ مَا فِیْھَا وَ تَخَلَّتْ وَ اَذِنَتْ لِرَبِّھَا وَ حُقَّتْ ۔ ( بہشتی زیور ،ص۶۴۲ حصہ نہم)
جواب :


عزت دار چندہ خور !!! اور بدنام مولوی


مولانا طارق جمیل صاحب مدظلہ العالی پر اعتراض کا منہ توڑ جواب


جہالت کا دوسرا نام بریلویت ہے یہ تو سب نے سنا ہی ہوگا اب اس جہالت کو اچھی طرح سمجھ لیںمولانا طارق جمیل صاحب پر ایک اعت...

Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Monday, July 20, 2015

منگل، 14 جولائی، 2015

صحافتی بھتہ پر پلنے والا ’’امت اخبار‘‘ اپنی زبان کو لگام دے


صحافتی بھتہ پر پلنے والا ’’امت اخبار‘‘ اپنی زبان کو لگام دے
مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی حفظہ اللہ

ہمارے ملک میں صحافت ایک منافع بخش کاروبار بن گیا ،ولوگوں کی عزتیں اچھالنا ،بلیک میلنگ ،جھوٹ ،بے بنیاد الزام تراشی ،بنا ثبوت رپورٹنگ ،غلط افواہیں اس کا روز کا معمول ہے ۔اس کالی صحافت کی دنیا میں صف اول میں آپ کو ’’امت ‘‘ اخبار نظر آئے گا ۔جو مخالفین کے ہاتھوں اپنا اخبار بکوانے کیلئے آئے دن کبھی مولانا فضل الرحمن صاحب مدظلہ العالی اور کبھی مفتی نعیم صاحب مدظلہ العالی کے خلا ف جھوٹی خبریں شائع کرتا رہتاہے اور ثبوت ایک بھی نہیں دیتا۔جس کی خبر اور کالم قصہ کہانیوں کا واحد ذریعہ ’’امت کے خاص ذرائع ‘‘ نامی ’’نامعلوم افراد‘‘ہوتے ہیں۔تازہ شمارے میں اپنی کالی صحافت کی روایت برقرار رکھتے ہوئے جنید جمشید اور اس کی آڑ میں ولی کامل مولانا طارق جمیل صاحب مدظلہ العالی پر تبرا کرکے اپنی سیاہ بختی کا ثبوت دیا ہے اور گڑھے مردے اکھاڑنے کی ناکام کوشش کی ہے۔امت کی اطلاع کیلئے عرض ہے کہ ام المومنین عائشہ صدیقہؓ کی توہین کے جھوٹے الزام کا ایسا منہ توڑ جواب یہ راقم دے چکا ہے کہ الزام لگانے والے اب تک منہ چھپائے پھر رہے ہیں اور اپنے گھر کا گندچاٹ رہے ہیں ۔امت اخبار کو مقدس شخصیات کی ناموس کا اتنا ہی خیال ہے کہ تو اپنے قائد سید ابو الاعلی مودودی کی گستاخیاں بھی چھاپے جو حضرت موسی علیہ السلام کو گناہ گار نبی اکرم ﷺ کوعرب کا ان پڑھ ،حضرت عثمان غنی و امیر معاویہ رضی اللہ تعالی عنہما کو بدعتی کہتا تھامعاذ اللہ ۔ جس کے کفریہ عقائد پر ملک کے جید علماء کفر کے فتاوی دے چکے ہیں ۔امت اخبار میں اگر جرات ہے تو جنید جمشید اور مودودی کے حوالے سے جس فورم پر چاہے مجھ سے مناظرہ کرلے ۔اگر یہ نہیں ہوسکتا تو کیا امت انتظامیہ میں اتنی اخلاقی جرات ہے کہ وہ اس حوالے سے میرے مضمون کو اپنے صفحات کی زینت بنانے کی یقین دہانی کرائے؟رمضان ٹرانسمیشن کی آڑ میں علمائے پر تبرا کرنے والا امت کیا بھول گیا کہ پچھلے سال گستاخ صحابہ عامر لیا قت حسین بریلوی نے جیو میں لائیو یہ کہا تھا کہ امت کے صحافی اور کالم نگار مجھے سے اپنی فیملی کے ساتھ پروگرام میں شرکت کیلئے ٹکٹ کی بھیک مانگتے رہے اور ٹکٹ نہ ملنے پر میرے خلا ف کالم لکھ دیا۔کراچی میں کس کو یہ معلوم نہیں کہ امت اپنے رنگین صفحہ پر کسی بھی ادارے یا شخصیت کی حمایت میں کالم چھاپنے پر پانچ ہزار سے پچیس ہزار تک کی رشوت وصول کرتا ہے اور نہ دینے پر دھمکیاں دیتاہے ۔میں آپ کو دعوت دیتا ہوں کہ پانچ ہزار روپے دے کر آپ امت اخبار میں کسی بھی جھوٹ کو چھاپ یا خبر کی اشاعت کو رکواسکتے ہیں ۔امت اخبار کا ایمان کراچی کی ٹریفک پولیس سے بھی سستا ہے۔

سوموار، 13 جولائی، 2015

مروجہ قضائےعمری بدعت ہے


مروجہ قضائےعمری بدعت ہےاز مناظر اسلام حضرت علامہ ساجد خان نقشبندی حفظہ اللہ
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Monday, July 13, 2015

ہفتہ، 11 جولائی، 2015

کینیڈین شیخ الاسلام کی جہالت

کینیڈین شیخ الاسلام کی جہالت
 
اہل علم حضرات جانتے ہیں کہ رحمن اسم مبالغہ ہے اس کا وزن’’فَعْلان ‘‘ یعنی ف پر زبر اور عین پر جزم ہے مگر پروفیسر صاحب نے اس کی جو دو آخری مثالیں پیش کی ہیں وہ ان کی جہالت ہے اولا جریان میں جیم پر اگر چہ زبر ہے مگر را پر بھی زبر ہے اور طغیان میں طا پر ضمہ ہے اور یہ دونوں مبالغے کے صیغے نہیں بلکہ مصدر ہیں اسم مبالغہ کیلئے مصدر کی مثالیں پیش کرنا کسی کینیڈین نحوی ہی کا کام ہوسکتا ہے

(بشکریہ مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی حفظہ اللہ)


جمعہ، 10 جولائی، 2015

مولانا قاسم نانوتوی ؒ و مولانا گنگوہی ؒ پر بریلویوں کی طرف سے بعض سوقیانہ اعتراضات کا دندان شکن جواب



مولانا قاسم نانوتوی ؒ و مولانا گنگوہی ؒ پر بریلویوں کی طرف سے بعض سوقیانہ اعتراضات کا دندان شکن جواب
ساجد خان نقشبندی

سوال : بسم اللہ الرحمن الرحیم ۔ مناظر اسلام وکیل ناموس صحابہ ترجمان مسلک حقہ علماء دیوبند محترم و مکرم حضر ت مولانا رب نواز حنفی زید مجدہ زادکم اللہ فیوضہم ۔السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ! سلام مسنونہ کے بعد امیدواثق رکھتا ہوں کہ آنجناب نہایت خیر و عافیت کے ساتھ ہوں گے اور مستقلا دعا گو ہوں کہ باری تعالی آنجناب کو خیر و عافیت کے ساتھ رکھے اور دشمنان اسلام کے عزائم سے آنحضرت کی حفاظت فرمائے (آمین)۔سلام مسنونہ اور علیک سلیک کے بعد راقم کا تعارف یہ ہے کہ ۔۔۔۔۔۔تحریر کا مقصد یہ ہے کہ راقم کو تحریر لکھنے سے دو دن قبل نیٹ سے ایک پوسٹر جوکہ موسوم تھا ’’دیوبندیوں کا اسلام ‘‘ جس میں علماء دیوبند کے سرخیل قاسم العلوم والخیرات حضرت نانوتوی ؒ نور اللہ مرقدہ اور حضرت گنگوہی ؒ نور اللہ مرقدہ جو علم زہد و تقوی میں اپنی مثال آپ ہیں ان دو حضرات پر الزامات اور بہتان اکبر لگایاگیا ہے اور مسلک علماء دیوبند پر کیچڑ اچھالا گیا ہے اور یہ پوسٹر ان لوگوں کی جانب سے لکھا گیا ہے جو کہ ہمیشہ علماء دیوبند کو بدنام کرنے کی مذموم جسارت کرتے ہیں اور ناکامی ان کا شکریہ ادا کرتی ہے ( اس سے مراد بریلوی حضرات ہیں ) اور اس پوسٹر کو پڑھنے سے معلوم ہوا کہ یہ پوسٹر جواب ہے اس پوسٹر کا جس کا نام ’’بریلویوں کا اسلام ‘‘ ہے اس پوسٹر جسکا نام بریلویوں کا اسلام ہے کوئی علم نہیں ہے کس نے لکھا کہاں لکھا اور نیٹ پر بھی موجود نہیں ہے آپ سے جو معلوم کرنا ہے اسے پہلے درست معلوم ہوا ہیکہ اس پوسٹر (دیوبندیوں کا اسلام ) من و عن مع حوالہ نقل کیا جائے ۔لہذا اولا پوسٹر (دیوبندیوں کا اسلام ) نقل کرتا ہوں بھر سوالات رقم کروں گا امید کرتا ہوں کہ نظر کرم فرمائیں گے۔

طاہر القادری منہاجی مفتی کے فتوے کی زد میں


ایک قبضہ (مٹھی) داڑھی رکھنا سنت ہے اس سے کم کروانے والا فاسق ہے اس کے پیچھے نما ز پڑھنا مکرو ہ ہے (منہاج الفتاوی) طاہر القادری منہاجی مفتی کے فتوے کی زد میں


طاہر القادری کا ’’انقلابی مجرا‘‘

طاہر القادری کا ’’انقلابی مجرا‘‘
منہاجی مفتی کے فتوے کی زد میں
 
ایمان سے بتائیں کیا یہ سب بیہودگیاں طاہر الخارجی انقلاب میں نہیں ہورہی تھیں؟


طاہر القادری اور خمینی بھائی بھائی

طاہر القادری اور خمینی بھائی بھائی
طاہر القادری امام خمینی سے بہت مشابہت رکھتے ہیں ان کی سوچ عقیدہ فکر ایک ہے
 ( بحوالہ ماہنامہ منہاج القرآن ،فروری 2001،ص166)
بشکریہ مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی حفظہ اللہ


کشمیر میں جنگ لڑنے والے دہشت گرد ہیں طاہر الخارجی


کشمیر میں جنگ لڑنے والے دہشت گرد ہیں ظاہر الخارجیطاہر الخارجی امریکا میں بیان کرتے ہوئے کہتا ہے کہ جب افغان جنگ ختم ہوئ...
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Thursday, July 9, 2015

لفظ بریلی کا معنی


جمعرات، 9 جولائی، 2015

شاہ عبد اللہ مرحوم کی وفات اور بریلوی مفتیوں کا امتحان


بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
تحفہ لاثانی برائے حنیف قریشی رضاخانی
شاہ عبد اللہ مرحوم کی وفات اور بریلوی مفتیوں کا امتحان
مولانا ساجد خان نقشبندی
بنتے ہو وفادار تو وفا کرکے دکھاؤ
کہنے کی وفا اور ہے کرنے کی وفا کچھ اور ہے
کچھ دن پہلے سوشل میڈیا پر پنڈی کے رضاخانی مولوی حنیف قریشی کا ایک ویڈیو کلپ گردش کررہا تھا جس میں وہ فرمارہے تھے کہ دہشت گردوں کا سب سے بڑا حامی ملک ریاض ہے کیونکہ اس نے اپنی مسجدوں میں دیوبندی مولوی رکھے ہوئے ہیں۔نیز دیوبندی خارجی ہیں معاذاللہ دہشت گرد ہیں ہمیں رکھو جو یہ فتوی دیں گے کہ انہیں قتل کرنے والے کو دو جنتیں ملیں گی ۔
 (ملخصا)

مظفر حسین شاہ کو مناظرے کا چیلنج مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی مدظلہ العالی


مظفر حسین شاہ کو مناظرے کا چیلنج مولانا ساجد خان صاحب نقشبندی مدظلہ العالی
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Thursday, July 2, 2015

حدائق بخشش حصہ سوم کس کی ہے? علامہ ساجد خان صاحب نقشبندی


حدائق بخشش حصہ سوم کس کی ہے? علامہ ساجد خان صاحب نقشبندیاستاذ محترم کا رضاخانی مولویوں کو منہ توڑ جواب جس کا جواب الجواب الحمد للہ اب تک کوئی رضاخانی ملاں نہ دے سکا طالب دعا ریحان احمد

Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Friday, July 3, 2015

مولانا طارق جمیل صاحب پر مظفر حسین کا اعتراض


مولانا طارق جمیل صاحب پر مظفر حسین کا اعتراضمبلغ اسلام مولانا طارق جمیل صاحب مدظلہ العالی پر بریلوی مولوی پیر مظفر حسین...
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Wednesday, May 20, 2015

جنید جمشید پر اعتراض کرنے والے اپنے گھر کا گند دیکھیں



جنید جمشید پر اعتراض کرنے والے اپنے گھر کا گند دیکھیںکچھ عرصہ پہلے رضاخانیوں نے جمید جمشید کے حوالے سے مسلک اہل السںہ و...
Posted by Allama Sajid Khan Naqshbandi D.B on Friday, May 15, 2015

منگل، 7 جولائی، 2015

مولانا طارق جمیل صاحب کی بنی گالا آمد۔۔۔۔۔اور معترضین!!!



مولانا طارق جمیل صاحب کی ایک سیاسی شخصیت سے ملاقات اور یار لوگوں کی کرم فرمائی!!!

براہ کرم اس مضمون کو ایک بار مکمل ضرور پڑھیں

ساجد خان نقشبندی عفی عنہ

کچھ عرصہ پہلے فیس بک پر ایک تحریر پڑھی تھی جس میں کسی دل جلے نے لکھا تھا کہ کل تک نکاح کے وقت جن کی ٹانگیں صرف اس لئے کانپتی تھیں کہ کہیں قاضی صاحب چھ کلمے نہ پوچھ لے وہ آج سوشل میڈیا پر اسلامک سکولر بنے پھرتے ہیں اور کل تک پڑوسی کے جھگڑے کے وقت گھر کا دروازہ بند کردینے والے آج میڈیا پر دفاعی تجزیہ نگار بنے ہوئے ہیں ۔شومئی قسمت کہ ہمیں بھی جلد ہی اس تلخ تجربہ کا سامنا کرنا پڑا اور بظاہر اس لطیفے کو حقیقت کا روپ دھارتے ہوئے دیکھا ۔ہواکچھ یوں کہ پوری امت کا غم دل میں سموئے مبلغ اسلام ولی کامل حضرت مولانا طارق جمیل صاحب مدظلہ العالی حال ہی میں ایک سیاسی جماعت کے سربراہ کی دعوت پر ان کے گھر گئے وہاں افطار کے وقت ایک کھانے کی میز پر ان سیاسی شخصیت کی زوجہ کی تصویر مولانا کے ساتھ سوشل میڈیا پر آئی ،تصویر کا آنا تھا کہ سوشل میڈیا کے مذہبی بھانڈوں کی قوالیاں شروع ہوگئیں ۔اور علامہ الدہر ،شیوخ الاسلام حضرات پردے اور غیر محرم کے حوالے سے مسائل دقیقہ و تحقیقات انیقہ کے لیکچر مولانا کو سنانے لگے ۔۔افسوس تو یہ کہ واعظ کی یہ مجالس ان حضرات کی طرف سے منعقد کی جارہی ہیں جو خود کئی فرائض و واجبات شرعیہ سے بے بہرہ اور کھلم کھلاان کے باغی ہیں ۔جن کو اگر بٹھاکر صرف یہ پوچھ لیا جائے کہ کن کن سے پردہ فرض ہے اور کون کو ن محرم ہے اور اس کے متعلق قرآن میں حکم کہاں ہے ؟تو یقیناًوہ اپنی بغلیں جھانکنا شروع کردیں گے ۔مجھے نہ تو ایسے لوگوں سے گلہ ہے نہ اس وقت میں ان سے مخاطب ہوں کیونکہ ان دوکانداروں کو اپنی دکان چلانے کیلئے کوئی نہ کوئی مال چاہئے اور ظاہر ہے کسی کی عزت کا سودا کرنے سے زیادہ منافع بخش کام اور کیا ہوسکتا ہے ؟

سوموار، 6 جولائی، 2015

علمائے اہل السنہ والجماعۃ دیوبند پر وہابیت کا الزام اور اس کا جواب


بسم اللہ الرحمن الرحیم۔

علمائے اہل السنہ والجماعۃ دیوبند پر وہابیت کا الزام اور اس کا جواب

(یہ مضمون راقم الحروف کی کتا ب ’’دفاع اہل السنۃ والجماعۃ ‘‘ سے ماخوذ ہے جو بریلوی مولوی کاشف اقبال رضاخانی کی کتاب کے جواب میں ہے کاشف اقبال کے پیش کئے گئے ہر حوالے کا تفصیلی و مدلل جواب میری کتاب میں ملاحظہ فرمائیں یہاں صرف اس الزام کا اصولی و عمومی جواب دیا جارہا ہے)

مولانا ساجد خان نقشبندی


کاشف اقبال رضاخانی نے وہی گھسا پٹا اعتراض کیا ہے کہ ویوبندی وہابی ہیں ان کے بڑے خود کو وہابی کہتے رہے یہی اعتراض آج کل دیگر بریلوی رضاخانی مولویوں کی طرف سے بڑے شد و مد کے ساتھ کیا جارہا ہے اسلئے ہم اس اعتراض پر ذرا تفصیل سے بات کرنا چاہتے ہیں۔

جمعہ، 3 جولائی، 2015

انقلاب یا انتشار۔۔۔!!!

 

انقلاب یا انتشار۔۔۔!!!


قارئین کرام !موجودہ ملکی صورتحال دیکھ کر یقیناًآپ بھی غیر یقینی کیفیت سے دوچار ہوں گے ۔ملک عجیب بحران سے دوچار ہے شاید یہ کہنا بالکل نا مناسب نہ ہوگاکہ ملک کو ایسی مشکل کبھی پیش نہ آئی کہ ملک کو ہر طرف سے دشمن پسیجنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ایک طرف ہندو بنیا پاکستان کی ڈیڑھ سو کلو میٹر سے زاید بانڈری لکیر کراس کر کے دراندازی کررہا ہے ، تو دوسری طرف اسلام اور مسلمانوں کا تقیہ باز دشمن ایران دو کلومیٹر اندر گھس کر ملک کی عوام کو قتل کررہا ہے ۔عالمی صلیبی طاقتوں کی ریشہ دوانیاں اس پر مستزاد ہے ۔
اندرون ملک صورتحال یہ ہے کہ ہر طرف سیلاب نے تباہی مچادی ہے ۔لیکن آزمائش سے قطع نظر اگر دیکھا جائے تو ملک کو دونوں طرف سے نقصان پہنچنانے والے ان بیرونی عناصر سے کئی زیادہ وہ لوگ ملکی بحران کے ذمہ دار ہیں جو ملک کے مرکز میں چوکڑی مارے بیٹھے ہیں ۔ انہیں یہ بحران اس لئے نظر نہیں آتا کہ یا تو وہ طبقہ اشرافیہ سے تعلق رکھتا ہے یا پھر غیر ملکی شہریت کا حامل ہے ۔


جمعرات، 2 جولائی، 2015

زاغ معروفہ کی حلت و حرمت کا مسئلہ

بسم اللہ الرحمن الرحیم.

زاغ معروفہ کی حلت و حرمت کا مسئلہ

علامہ ساجد خان نقشبندی مدظلہ العالی

قارئین کرام کافی عرصہ سے ساتھیوں کی طرف سے مسلسل اس بارے میں تقاضہ کیا جارہا تھا کہ فقیر اس مسئلہ پر کچھ لکھے مگر پے درپے مصروفیات کی وجہ سے باوجود قلبی رغبت کے اب تک اس موضوع پر کوئی خاطر خواہ مضمون نہ لکھ سکا ۔آج اللہ رب العزت نے توفیق دی اور کچھ فارغ وقت ملا تو سوچا اس موضوع پر کچھ لکھتا جاؤں۔
قارئین کرام !دراصل قطب الاقطاب فقیہ العصر حضرت مولانا رشید احمد گنگوہی رحمۃ اللہ علیہ سے سہانپور کے کسی باشندے نے سوال کیا کہ :
سوال:جس جگہ زاغ معروفہ کو اکثر حرام جانتے ہوں اور کھانے والے کو برا کہتے ہوں تو ایسی جگہ اس کوا کھانے والے کو کچھ ثواب ہوگا۔یا نہ ثواب ہوگا نہ عذاب؟۔