جمعرات، 30 جولائی، 2015

مسئلہ یزید اور علماء اہل السنت والجماعت دیوبند


مسئلہ یزید اور علماء اہل السنت والجماعت دیوبند
از افاداتِ مولانا ساجد خان نقشبندی صاحب حفظہ اللہ

مولانا مفتی رشید احمد گنگوہی رحمتہ اللہ علیہ

:
یزید کے وہ افعال ناشائستہ ہرچند موجب لعن کے ہیں ،مگر جس کو محقق اخبار اور قرائن سے معلوم ہوگیا کہ وہ ان مفاسد سے راضی وخوش تھا اور ان کو مستحسن اور جائز جانتا تھا اور بدون توبہ کے مرگیا تو وہ لعن کے جواز کے قائل ہیں اور مسئلہ یوں ہی ہے ۔
آگے لکھتے ہیں:
پس جواز لعن اور عدم جواز کا مدار تاریخ پر ہے اور ہم مقلدین کو احتیاط سکوت میں ہے ۔ کیونکہ اگر لعن جائز ہے تو لعن نہ کرنے میں کوئی حرج نہیں۔فقط واللہ تعالیٰ اعلم
(مولانا رشیداحمد گنگوہی ؒ ، فتاویٰ رشیدیہ، کتاب ایمان اور کفر کے مسائل ، ص ۳۵۰)
مفتی اعظم پاکستان حضرت مفتی شفیع صاحب ؒ اپنی کتاب میں یزید کے متعلق لکھتے ہیں :
"یزید اور اس کے امراء و حکام نے شیطان کی پیروی کو اختیار کررکھا ہے اور رحمٰن کی اطاعت کو چھوڑ بیٹھے ہیں اور زمین میں فساد پھیلا دیا حدود الٰہیہ کو معطل کردیا اسلامی بیت المال کو اپنی ملک سمجھ لیا اللہ تعالی کے حلال کو حرام کر ڈالا اور حلال کو حرام ٹھرادیا"۔(شہید کربلا ،ص۵۷،۵۸)
مگر یذید کے اعمال اور کارنامے اس کے بعد بھی سب سیاہ کاریوں ہی سے لبریز ہیں مرتے مرتے بھی مکہ مکرمہ پر چڑھائی کیلئے لشکر بھیجے ہیں اسی حال میں مرا ہے ’’۔ (ص۸۸)
مولانا عبد الستار تونسوی صاحب رحمۃ اللہ علیہ شیعہ مناظراسمعیل گوجر کے سامنے یزید کے متعلق اہل سنت کا نظریہ بیان کرتے ہوئے اہل سنت کے عقائد کی کتاب نبراس (شرح عقائد نسفی ص۵۵۳) کا حوالہ دیتے ہوئے فرماتے ہیں:
ترجمہ:اور ہمارے علماء ان لوگوں پر لعنت کرنے کے جواز پر متفق ہیں جنہوں نے امام حسینؓ کو قتل کیا یا امام حسینؓ کے قتل کا حکم دیا یا امام حسینؓ کے قتل کی اجازت دی اور ان کے قتل پر راضی وخوش ہوئے اور اس کے بعد اسی نبراس کے ص ۵۵۴ پرہے : لعنۃ اللہ علیہ و علی اعوانہ و انصارہ ترجمہ اللہ تعالی کی لعنت ہو یزید پر اور اس کے معاونین اور مددگاروں پر جنہوں نے امام حسینؓ کو شہید کرنے میں اس کی امداد کی دیکھئے مولوی اسمعیل صاحب اگر یزید اہل سنت کا امام ہوتا تو ہم اس کے متعلق یوں لکھتے ’’۔(مناظرہ باگڑ سرگانہ ،ص۲۱۶،تنظیم اہل سنت پاکستان)
مہتمم دارالعلوم دیوبند قاری محمد طیب صاحبؒ نے اپنی کتاب "شہیدِ کربلا اور یزید" میں یزید کی پلیدیت اور فسق و فجور کو ثابت کیا ہے اور ایک عباسی نامی ناصبی کا رد بھی کیا ہے ۔
بانیِ دارالعلوم دیوبند حضرت مولانا محمد قاسم نانوتویؒ نے اپنی فارسی کتاب "شہادتِ امام حسین رضی اللہ تعالیٰ عنہ و کردارِ یزید" (اب اردو ترجمہ بھی دستیاب ہے ) میں یزید کا فاسق فاجر اور ظالم ہونا ثابت کیا ہے اور فتنہ یزیدیت کا دفاع کرنے والے ناصبیوں اور خارجیوں کا خوب رد کیا ہے ۔
ضروری نوٹ:"رشید ابن رشید" اور "حیاتِ سیدنا یزید" نامی کتاب کا اہل سنت دیوبند سے کوئی تعلق نہیں اور جھوٹی تقاریظ سے علماء اہل سنت کو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی ہے ۔ رضاخانی حضرات ان کتاب کو علماء دیوبند کی معتبر کتاب بتارہے ہیں۔
ان کو چاہیئے کچھ خدا کا خوف کریں۔کتاب "رشید ابن رشید" کی حقیقت پر تفصیلی جواب مناظرِ اسلام حضرت مولانا ساجد خان نقشبندی حفظہ اللہ نے اپنی زیرِ طبع کتاب ‘‘دفاع اہل السنۃ والجماعۃ’’ میں دیا ہے جلد منظرِ عام پر آنے والی ہے ۔

0 تبصرے:

اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

نوٹ: اس بلاگ کا صرف ممبر ہی تبصرہ شائع کرسکتا ہے۔